“Na Janay Asal Kya Hoga.. Aqs Toh Bay-Misaal Hai Murshid!”

میں نے لوگوں کو اکثر کہتے سنا ہےکہ دِل کی سنو ، دل سے کرو، دل کی مانو، دل نا دُکھائو۔ میں یہ سوچتی ہوں کہ اگر یہ دوسرے جسم کے اعضاء جیسا ہی ہے تو پِھر دل کو اتنی اہمیت کیوں دی جاتی ہے ؟ آخر یہ دِل ہے کیا ؟

دِل کے لفظی معنی بتاتےہیں کے یہ کسی چیز کا مرکز یا سینٹر ہے. ایسا پوائنٹ جس پر وہ چیز کھڑی ہے. انسانی جسم میں یہ ایک آرگن ہے جسکا کام ہے خون کی صفائی کرنا. لیکن جب ہم اسکو بیشتر بار مخاطب کرتے ہیں تو یہ صرف ایک آرگن نہیں رہتا

اللہ والے کہتے ہیں کے دِل کو صاف رکھو یہ اللہ کا گھر ہے . لیکن دِل تو میرے پاس ہے ، آپ کے پاس ہے اور دنیا کے ہر انسان کے پاس ہے تو کیا اللہ کے یہ سب گھر ہیں ؟ وہ کہتے ہیں کے اللہ نا آسمانوں میں سماتا ہے نا زمین کی وُسعتوں میں مگر پھر ایک مومن کے دِل میں سما جاتا ہے؟ حضرت نصیرالدین چراغ دہہلویؒ فرماتے ہیں کے کیا عجب تماشہ ہے، ایک بُلبلے میں ایک سمندر کا سما جانا؟

اب یہ جو بلبلہ ہے جو محلِ ربانی ہے، یہ وہ چیز ہے جو ہر انسان کے پاس ہے. لیکن ہمیں تو اپنے دل کی خبر ہی نہیں. اپنے دِل کا پتہ ہی نہیں رکھتے. ہاں مگر دوسروں کے دل کا ضرور پتہ رکھتے ہیں۔ بھول جاتے ہیں کہ اپنے دِل کو نہیں جانیں گے تو اسکو اللہ کا گھر کیسے بنائیں گے؟ وہ بادشاہوں کا بادشاہ، وہ اِس غلیظ سے محل میں رہے گا ؟ جس پر کینے کے دھبے ہوں، غصے اور لالچ کی غلاظت کے پردے ہوں،ظلم کا، حسد کا، دوسرے کا حق کھانے کا کچرا ہو.. اندازہ کریں کہ وہ رب جس کے سامنے حاضر ہونے سے پہلے اس کے حبیبﷺ جیسی ہستی بھی وضو کرتے ہیں تو اس کے محل کا معیار کیا ہوگا ؟ جس نے اپنی بارگاہ میں حاضر ہونے کے لیےخود آپ سے صفائی کی شرط رکھی ہے۔ جسکا حبیب کہہ رہا ہے کے نِصف ایمان تو یہ صفائی ہے . تو وہ صفائی کیا صرف جسمانی ہے ؟ نہیں!یہ صفائی تو دراصل اس دِل کی صفائی ہے جسکی آپ نے کبھی قدر ہی نہیں کی. آپکا دِل ہی تو اس پاک رب کا گھر ہے.. اسکو صاف تو کرنا ہے ،پاکیزہ کرنا ہے. وہ پاکیزگی بلڈ سرکولیشن سے تو نہیں آتی اورمحض وہ آرگن تو اللہ کا گھر نہیں ہے. میں نے تو اتنی کوشش بھی نہیں کی کے اپنے خالق کا گھر پہچان سکوں جہاں پر اس نے مجھ سے ہم کلام ہونا ہے، اسکی تجّلیوں نے اُترنا ہے، اس کے لیے میں نےکبھی کوشش ہی نہیں کی. باہر سے اپنے ظاہری ٹھاٹ باٹ میں لگا رہا۔ منیی کیور بھی کروا لیا، میک اپ اور فیشل بھی ہوتے رہے لیکن دِل، جو میرے رب کا گھر ہے اُس کو میلا ہی رکھا

اب اِس صفائی سے ہوتا کیا ہے ؟ قرآن نے کہا ھُدًى لِّلْمُتَّقِيْنَ! ہدایت ہے مُتقّی کے لیے ۔مُتّقی کون ہے ؟ تقوے والا۔ وہ پرہیزگار جس نے اپنے دِل کی صفائی کی ۔ ندامت کے آنسوؤں سے التجا کے آنسوؤں سے ۔ اس نے اپنے دِل کو صاف کیا اس میں سے سب گندگی کو نکال باہر کیا۔ وہ مُتّقی ہو گیا۔ اب اُس شخص کے لیے ہدایت ہے قرآن میں اور نبی پاکﷺ فرماتے ہیں کے مومن کی فراست سے ڈرو کیوں کے وہ اللہ کے نُور سے دیکھتا ہے .اور اللہ کے نُور کا وروُد دِل پے ہوتا ہے . پِھر یہاں سے اسکو ہدایت ملتی ہے اُس کتاب میں سے جو حادی نے بھیجی ہے. اور پِھر اس کے سامنے سب حقیقت کُھلتی ہے. تو عقل کی، آپکی دانش کی بنیاد ہی اِس بات پر ہے کے آپکا دِل کتنا پاک ہے. تو اگر ہدایت پانی ہے تو اسکو صاف کرو کے جہاں پے حادی کی تجّلیات اتریں اور آپکو ہدایت نصیب ہو، آپکو حقیقت کا اندازہ ہو۔ کیونکہ زندگی کا اصل مقصد تو تلاشِ حقیقت ہے۔

چیز کو پڑھ لینا ایک بات ہے۔ پڑھنے اور سمجھنے میں فرق ہے۔اور صرف پڑھ کے آپکو ہدایت ملنا ضروری تو نہیں. ہدایت کے لیے پہلے دِل کے شیشےکو صاف کرنا ہے جس میں تجّلیاتِ اِلٰہی ریفلکٹ کر سکیں اور جب وہ روشنی پڑتی ہے تو یہی قرآن کے لفظ، پھر لفظ نہیں رہتے، کچھ اور معانی دینے لگتے ہیں اور ایک مقام پر سب حقیقت سمجھا دیتے ہیں، سب راز بتا دیتے ہیں

نبی پاکﷺ نے بھی دعا فرمائی کے اللہ مجھے چیزوں کی حقیقت کا علم عطا فرما. حقائق کا علم جب تک دِل کی صفائی نا ہو تب تک نہیں ملتا۔ آپکو علم مل سکتا ہے کسی چیز کا لیکن اسکی حقیقت آپ پر تب ہی کھُلے گی جب آپکا دِل صاف ہو گا. کیا بدقسمتی ہے کہ آج کے اِنسان میں اپنے رب کو پانے کی، اس سے ہم کلام ہونے کی، حقیقت تلاش کرنے کی جستجو ہی نہیں ہے۔ مگر پھر ایسا انسان، ایسا خلیفۃ اللہ، ایسا نائب ہونا بھی کیا ہونا جس میں سے اُسکے اصل کا عکس ہی نہ واضع ہو؟ وہ کہتے ہیں کہ

عشق جان کا وبال ہے مرشد
آپکا کیا خیال ہے مرشد
نا جانے اصل کیا ہوگا
عکس تو بے مثال ہے مرشد

Advertisements

Goodbyes…

This was not the first time I said goodbye to someone. I have come across a lot of people who came into my life and so many who left for good. Some taught me good lessons and left, others stayed and changed me completely. So along with saying a lot of hellos, all these years I have said many goodbyes as well. But today it was different. This one felt messy. This one left an ache in my heart that only he can fill up again.

The interesting thing about goodbyes is that instead of getting easier by the time, I have realized that every new goodbye does more damage to my heart than the previous one. Maybe that is because every person when leaves, takes with him a little part of us, leaving us more vulnerable than before. So with time we get weaker and it keeps getting more difficult to part ways from the people we love.

However some goodbyes feel right because the happiness to reunite again may not be possible without saying a goodbye. They make you realize how much that person means to you. Other goodbyes have an element of finality which makes them harder. When you know that this is the last time you are going to see that person you thought would stay forever. When you could do anything to make that person stay but nothing works. Such goodbyes drain us. They change us. They leave us incomplete.

Goodbyes teach us a great lesson. A lesson that this world is not forever. That we were not made for this world and that everybody is going to leave sooner or later. But we often forget how temporary this world is allowing ourselves to get attached to the perishable, to get satisfied with the material, instead of holding out for the eternal. That is what makes goodbyes difficult.

So with every hello, there tends to be a goodbye as well. Along with celebrating the beginning, we must prepare ourselves and welcome the end of all things too. For sometimes, knowing that nothing lasts forever is the only way we can learn to fall in love with all the moments and all the people that are meant to take our breath away.

Every Single Life Matters!

Hello Guys,

I just woke up with a heavy heart today. Although yesterday was a very happy day for me but it ended with a news which left me devastated. Yes I am referring to the attacks in Madinah Sharif. I am sure the Holy Place is equally dear to all of you and all the Muslim world. It felt like an attack on us, right on our hearts!

The world is going through very hard times right now. Its not about me or you or not any other individual. It’s about the whole mankind. The whole mankind is suffering. It doesn’t matter who is killing and who is being killed. All that matters is that the whole humanity is suffering, directly or indirectly. It does not even matter that who we believe in or what religion we are following as long as we don’t give respect to others differences, religions, cultures and identities. This is what makes us unique. This is what makes us beautiful.

So let’s pray for not only a few individuals but for the whole mankind because every single life matters. May Allah make this earth a peaceful place for us.

 

Ameen!

Na Poocho…

Jahan pyar ho gaya ho, wahan imteyaz kya hai
Yeh Jahaan-e-Ashiqui hai, yahan rung o boo na poocho

Na yahan hai koi Sajid, na yahan kisi ko sajda
Na talab na koi talib, yeh maqaam-e-hoo na poocho

Jo nahin hai aankh pur nam, toh yeh guftagoo na poocho
Yeh hai dard ka fasana, isay bay-wuzoo na poocho

Mera Yaar samnay hai, mujhay kaif ho raha hai
Main Namaz parh raha hoon, mera Qibla roo na poocho

Main azal se lay k ab tak, tujhe dhoondta phira hoon
Main jahan jahan bhi thehra, meri justujoo na poocho

Main hoon paikar-e-tamanna, hai ajab mera taqazaa
Tumhe mangta hoon tum say, meri dil lagi na poocho…

Meri Zindagi To Firaaq Hai!

Meri Zindagi to firaaq hai, woh azal se dil main makeen sahi
Wo nigah’e_shauq se door hain, rag’e_jaan se lakh qareen sahi

Hamein jaan dainee hai aik din, wo kisi tarah wo kahin sahi
Hamein aap khainchiye daar par, jo nahi koi to hameen sahi

Sar_e_toor ho, sar_e_hasher ho, hamein intizaar qubool hai
Wo kabhi milein, wo kahin milein, wo kabhi sahi, wo kahin sahi

Na ho un pe kuch mera bass nahi, k ye aashqi hai hawas nahi
Mai unhi ka tha, mai unhi ka hoon, wo mere nahi to nahi sahi

Mujhe bhaithne ki jaga milay, meri aarzoo ka bharam rahay
Teri anjuman mein agar nahi,teri anjuman k qareen sahi

Tera dar to hum ko na mil saka, teri rahguzar ki zameen sahi
Hamain sajda karne se kaam hai, jo wahan nahin to yahin sahi

Meri zindagi ka naseeb hai, nahin door mujh se qareeb hai
Mujhay uska gham to naseeb hai wo agar nahin to nahin sahih

Jo ho faisala woh sunaaiye usay hashr pe na uthaiye
Jo karain gay app sitam wahan, wo abhi sahi, wo yehin sahi

Use dekhne ki jo lau lagi tu ‘Naseer’ dekh hi lain gey hum
Wo hazaar aankh se door ho, wo hazaar pardah nasheen sahi

                         

                          ( Pir Naseer Udin Naseer Shah )